کراچی: قومی ہاکی ٹیم کے غیرملکی کوچ راولنٹ اولٹمنز نے کہا ہے کہ ایف آئی ایچ چیمپئنز ٹرافی میں پاکستان کی کامیابی کے امکانات محض 5 فیصد ہیں تاہم ایونٹ میں دنیا کی بہترین ٹیموں سے سخت مقابلوں کا سامنا رہے گا۔

چیمپئنز ٹرافی کے لیے قومی تربیتی کیمپ کے دوسرے مرحلے کے آغاز کے موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے غیر ملکی کوچ نے کہا کہ پاکستان ہاکی ٹیم میں بہتری کا عمل جاری ہے، کامن ویلتھ گیمز میں ملنے والے اچھے نتائج سے کھلاڑیوں کے اعتماد میں اضافہ ہوا ہے اور ان میں مقابلے کا رحجان بھی بڑھا ہے، وہ اپنی صلاحیت اور استعداد کے مطابق بہتر کھیل کا مظاہرہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن مجھے یہ کہنے میں کوئی عار نہیں کہ ان کی فزیکل فٹنس کا معیار زیادہ بہتر نہیں، ان کھلاڑیوں کو اپنی جسمانی قوت میں اضافے کے ساتھ اسٹیمنا کو بھی بہتر بنانا ہوگا جبکہ ذہنی طور پر مضبوطی بھی انتہائی ضروری ہے۔

راولنٹ اولٹمنز نے کہاکہ جیت اور ہار کھیل کا حصہ ہوتی ہے اور ہمیں ان چیزوں سے نکل کر اچھے نتائج کی جانب دیکھنا ہوگا، انھوں نے کہا کہ جدید ہاکی کے تقاضے تبدیل ہوچکے ہیں، انٹرنیشنل ہاکی میں ڈیفنس، پنالٹی شوٹ اور پنالٹی کارنر کے شعبوں میں زیادہ بہتر کارکردگی فائدہ مند رہتی ہے، ان عوامل کو مد نظر رکھ کر اقدامات پر عمل پیرا ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ اگر پاکستان چیمپئنز ٹرافی میں کامیابی پا گیا تو یہ ایک معجزہ ہی ہوگا، پاکستان کی ایونٹ میں کامیابی کا امکان 5 فیصد یا اس سے بھی کم ہے، حقیقت یہ ہے کہ چیمپئنز ٹرافی میں ایک سے 6 رینکنگ والی ٹیمیں شرکت کر رہی ہیں جبکہ پاکستان کو ان کیخلاف بڑی پرفارمنس دکھانے کی ضرورت ہوگی لیکن ہم صرف بھارت ہی نہیں بلکہ ہر ٹیم کیخلاف مقابلے کی تیاری کرینگے۔