لاہور: ڈوپنگ کیس میں 4 ماہ پابندی کا شکار ہونے والے اوپنر احمد شہزاد کی جانب سے والدہ کی دوا غلطی سے استعمال کیے جانے کی تصدیق ہوگئی۔

پی سی بی کی جانب سے جاری کردہ تفصیلی فیصلے کی کاپی میں یہ بات سامنے آئی کہ پاکستان ون ڈے کپ میچ سے قبل متلی کی شکایت پر انھوں نے اپنی اہلیہ سے دوا مانگی، انھوں نے غلطی سے کینسر کے مرض میں مبتلا والدہ کی وہ گولی دیدی جس کے اجزا واڈا اور پی سی بی کی جانب سے جاری کی جانے والی ممنوعہ ادویات کی فہرست میں آتے ہیں۔

احمد شہزاد نے ابتدائی تحقیقات میں اسی دوا کا نام نہیں بتایا تھا لیکن بعد ازاں والدہ کو تجویز کیا گیا ڈاکٹر کا نسخہ دکھانے کے ساتھ ہیڈ کوچ مکی آرتھر، سابق کپتان مصباح الحق اور آل راؤنڈر شعیب ملک کی جانب سے کریکٹر سرٹیفکیٹ بھی پیش کیے۔