لاہور:
چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ بھارت کو پاکستان کا پانی چوری نہیں کرنے دیں گے۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے دریائے راوی اور عباسیہ لنک کینال سے پانی کی چوری کے خلاف درخواست کی سماعت کی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ بھارت کیوں ہمارا پانی چوری کر رہا ہے، اسے پاکستان کا پانی چوری نہیں کرنے دیں گے، کیا پنجاب حکومت کو دریائے راوی سے بھارت کی پانی چوری سے متعلق علم ہے؟، اگر علم ہے تو اس کے خلاف کیا اقدامات کیے گئے ہیں۔

چیف جسٹس نے سیکرٹری آب پاشی پنجاب علی مرتضیٰ سے کہا کہ عباسیہ لنک کینال سے غریب کسانوں کا پانی چوری نہیں کرنے دیں گے، غریب مزارعوں کا پانی چوری کرنا ان کا خون چوسنے کے مترادف ہے، پانی چوروں کے خلاف پولیس سے مل کر آپریشن کریں، کسی کا استحصال نہیں ہونے دیں گے، پانی چوری کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج کیے جائیں، اقتدار میں موجود لوگوں کو بتا دیں یہ میری ان کو تنبیہ ہے۔ سپریم کورٹ نے سیکرٹری آب پاشی سے 4 جنوری کو عملدرآمد رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔