لاہور ہائی کورٹ نے سانحہ ساہیوال کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے سے متعلق وفاقی حکومت کو ایک ہفتے میں جواب داخل کرانے کی ہدایت کردی۔
ایکسپریس نیوز کے مطابق لاہور ہائی کورٹ نے سانحہ ساہیوال سے متعلق تحریری فیصلہ جاری کر دیا جس میں کہا گیا ہے کہ وفاقی حکومت 14 فروری تک جوڈیشل کمیشن بنانے سے متعلق فیصلے سے عدالت کو آگاہ کرے۔

یہ بھی پڑھیں: سانحہ ساہیوال؛ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کی جوڈیشل انکوائری کی پیشکش

 

دوران سماعت ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے وفاقی حکومت سے جوڈیشل کمیشن بنانے سے متعلق رابطے کے خط کو بطور ثبوت پیش کیا، وزیر اعظم نے جوڈیشل  کمیشن بنانے کے لیے خواہش کا اظہار کیا۔

تحریری فیصلے میں منیبہ خلیل، محمد جلیل، محمد جمیل، محمد سعید اور افضال کو چشم دید گواہ کے طور پر بیانات قلم بند کرنے کا حکم دیا جب کہ ڈاکٹر ندیم منیر احمد، میاں عامر، قاری عمر، رشید ، جاجی بھٹی کے بھی بیانات ریکارڈ کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔