361

مشترکہ پریس کانفرنس ، پاکستان کا ملائیشیا سے پام آئل خریدنے میں دلچسپی کا اظہار

پتراجایا:وزیراعظم عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس میں مقبوضہ کشمیر میں ناانصافی کیخلاف آواز اٹھانے پر مہاتیر محمد کا خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے کوالالمپور سمٹ میں شرکت نہ پر اظہار افسوس کیا اور ملائیشیا سے پام آئل خریدنے میں دلچسپی کا اظہار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان اور ملائیشیا کےدرمیان وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے ، وزیراعظم عمران خان اورہم منصب مہاتیرمحمدنےاپنےاپنےوفدکی قیادت کی، مذاکرات میں تجارت،معیشت اور سیاحت کے شعبوں کو فروغ دینے پربات چیت کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں:

وزیر اعظم کل 5 فروری کو آزاد کشمیر کا دورہ کریں گے

وزیراعظم عمران خان اور ہم منصب مہاتیرمحمد نے مشترکہ پریس کانفرنس کی ، ملائیشین وزیراعظم نے کہا پاکستان اور ملائیشیا نے تعلقات میں فروغ کیلئے ہر سطح پر دوروں اور مختلف شعبوں میں تعاون کیلئے اتفاق کیا ہے ، معاشی پارٹنر شپ کو مزید فروغ دیاجائے گا۔

مہاتیرمحمد کا کہنا تھا کہ پاکستان اور ملائیشیا کےدرمیان معاشی تعلقات اہم ہیں، تجارتی تعاون کو فروغ دینےکیلئے مذاکرات جاری رکھنے پر اتفاق کیاہے جبکہ وزیراعظم عمران خان سے دفاع سمیت دیگرشعبوں میں تعاون پر بھی بات ہوئی۔

ملائیشین وزیراعظم نے مزید کہا کہ فلسطین ، میانمار سمیت مسلم امہ کی صورتحال پر تبادلہ خیال ہوا، انسدادجرائم اور سیکیورٹی امور کےتعلقات کو مزید فروغ دیاجائے گا ، اس تعاون سےدونوں ممالک کے عوام کوترقی کے مواقع میسرآئیں گے۔

ان کاکہنا تھا کہ پاکستان اور ملائیشیا نے قیدیوں کے تبادلے کامعاہدہ کیا ہے ، قیدیوں کے تبادلے سے جرائم کی روک تھام میں مدد ملےگی، ملائیشیا میں آٹوموٹیو شعبے میں سرمایہ کاری کی ہے، پاکستان ملائیشیاسے پام آئل خریدنے میں دلچسپی رکھتا ہے۔


دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہادورہ ملائیشیا کی دعوت پر مہاتیرمحمد کا شکریہ ادا کرتاہوں ، دورے کا مقصد باہمی تعلقات کو مزید مضبوط بناناہے، صرف حکومت نہیں دونوں ممالک کےعوام بھی ایک دوسرےکےقریب ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں ناانصافی کیخلاف آواز اٹھانے پر مہاتیرمحمدکا خصوصی شکریہ اداکرتاہو ، مقبوضہ کشمیرمیں سیاسی رہنما قید، نوجوانوں کو گرفتار کیاجارہاہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ملائیشیا میں دسمبر میں کوالالمپور سمٹ میں شرکت نہ کرسکا ، قریبی دوست کو لگا کہ کانفرنس سے مسلم امہ تقسیم ہوجائے گی، اسلام پرغلط فہمیاں دور کرنے کیلئے محمدﷺ کی تعلیمات سے آگاہی ضروری ہے، اسلام کے مثبت امیج کیلئے مشترکہ میڈیا پر بھی بات چیت ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کوالالمپور کانفرنس میں شرکت نہ کرنے پر مجھے افسوس ہے ، ملائیشیا سے ہر شعبے میں مذاکرات جاری رہیں گے اور تجارت، دفاع سمیت دیگر شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دیں گے۔

قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے کے حوالے سے عمران خان نے کہا معاہدےسے پہلےبھی ملائیشیانے جرائم میں ملوث شخص کوحوالےکیاتھا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملائیشیا کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دیتے ہیں، امید ہے انجینئرنگ کے شعبے میں مزید سرمایہ کاری کریں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ سی پیک کےذریعے چینی مارکیٹ سے منسلک ہوگیا ہے ، پاکستان کےذریعے چین تک ایکسپورٹ جائے گی۔

بھارت کی جانب سے پام آئل کی خریدوفروخت پر پابندی سے متعلق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کشمیر کازکی حمایت پر بھارت نےملائیشیا کوپام آئل کی خرید و فروخت روکنے کی دھمکی دی، بھارت کی دھمکی کے بعد پاکستان ملائیشیا سے پام آئل خریدنے میں دلچسپی رکھتاہے ، پاکستان پام آئل درآمد کرکے ملائیشیا کے نقصان کا ازالہ کرےگا

مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال انتہائی سنگین ہے ، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے مہاتیرمحمدکو آگاہ کیا، اسلام کا حقیقی تشخص اجاگرکرنے کیلئے پاکستان اور ملائیشیا ملکر کام کررہےہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں