392

یمن میں القاعدہ کے اہم رہنما قاسم الریمی ہلاک

صنعا: یمن میں القاعدہ کے ایک اہم رہنما قاسم الریمی ہلاک ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق امریکی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ صنعا میں امریکی فورسز نے آپریشن کے دوران قاسم الریمی کو ہلاک کر دیا ہے۔

امریکی صدر ڈونل ڈٹرمپ نے القاعدہ قاسم الریمی کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔ وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ قاسم الریمی 2015 سے جہادی گروپ کی سربراہی کر رہا تھا، امریکی آپریشن کے یمن میں مارا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:

ملازمہ کی تنخواہ روکنے والے کفیل کو 7 سال کے واجبات ایک ساتھ دینے پڑ گئے

الریمی کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ 2000 میں مغربی مفادات پر متعدد حملوں میں ملوث رہا ہے، الریمی کے پیش رو کو امریکی ڈرون حملے میں ہلاک کیا گیا تھا جس کے بعد لیڈرشپ اس نے سنبھالی۔

قاسم الریمی القاعدہ کے جزیرہ نمائے عرب (AQAP) کی شاخ کا سربراہ تھا، یہ شاخ 2009 میں قائم ہوئی تھی، اس کا ہدف خطے میں تمام مغربی اثرات کا خاتمہ اور امریکی حمایت یافتہ حکومتیں گرانا تھا، یمن میں اس شاخ نے بڑی کامیابی حاصل کی اور سیاسی عدم استحکام کے دوران یہ بہت مضبوط ہوئی۔

رپورٹس کے مطابق قاسم الریمی کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کی افواہیں جنوری ہی میں گردش کرنے لگی تھیں، جس کے جواب میں 2 فروری کو تنظیم نے الریمی کی آواز میں ایک آڈیو پیغام جاری کیا، جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ وہ پہلے سے ریکارڈ کیا گیا ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں