409

جسٹس فائز عیسیٰ کیس : نئے اٹارنی جنرل کی حکومتی نمائندگی سے معذرت

اسلام آباد : اٹارنی جنرل خالد جاوید نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس میں حکومتی نمائندگی سے معذرت کرلی، ان کا کہنا ہے کہ میں اس مقدمے میں پہلے ہی اپنی رائے دے چکا ہوں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے نئے اٹارنی جنرل آف پاکستان بیرسٹر خالد جاوید خان نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس میں حکومت کی نمائندگی کرنے سے معذرت کرلی ہے۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ خالد جاوید کا مؤقف ہے کہ میں اس مقدمے میں پہلے ہی اپنی رائے دے چکا ہوں کیونکہ مقدمے میں وفاقی حکومت کی نمائندگی کرنا وفاق سے ناانصافی ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:اب ایک دن میں پشاور سے کراچی تک پہنچاجاسکتا ہے، عاصم سلیم باجوہ

انہوں نے کہا کہ عامر رحمان میری جگہ کیس میں عدالت کی معاونت کرسکتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ اس کیس میں مفادات کا ٹکراؤ ہے، حکومت نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو مقدمے میں وکیل مقررکرنے کی درخواست دی ہے، عدالت سے استدعا ہے کہ اس درخواست کو قبول کیا جائے۔

خیال رہے کہ خالد جاوید خان پہلے بھی اٹارنی جنرل کے فرائض انجام دے چکےہیں، جسٹس قاضی فائزکیس3 ہفتے ملتوی کرنے کی درخواست پہلے ہی دی جاچکی ہے۔

قبل ازیں سابق اٹارنی جنرل آف پاکستان انور منصور خان نے صدر مملکت کو ارسال کیے گئے استعفے میں کہا تھا کہ میں پاکستان بار کونسل کے مطالبے پر خود کو عہدے سے الگ کر رہا ہوں، گزشتہ ڈیڑھ سال تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لا کر ذمہ داریوں کو نبھایا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں